Home / چیچہ وطنی نیوز / شخصیت : رائے محمد مرتضی اقبال
mna rai murtaza iqbal

شخصیت : رائے محمد مرتضی اقبال

ارشد فاروق بٹ

تین دہائیوں تک چیچہ وطنی پر راج کرنے والے رائے خاندان کے چشم و چراغ رائے مرتضی اقبال کو ابتدا میں سیاسی ناکامیوں کا سامنا کرنا پڑا.
انہوں نے 2008 کے عام انتخابات میں پی پی 201 سےآزاد حیثیت میں الیکشن لڑا اور 32 ہزار 2 سو 16 ووٹ حاصل کیے۔ لیکن کامیاب نہ ہو سکے.
2013 کے عام انتخابات میں رائے محمد مرتضی اقبال نے پی ٹی آئی کی طرف سے حصہ لیا اور 36 ہزار 17 ووٹ حاصل کیے۔ اس بار بھی جیت ان کے حصے میں نہ آ سکی.
2016 کے ضمنی انتخابات میں رائے مرتضی اقبال نے این اے 162 (موجودہ این اے 149) سے پی ٹی آئی کی طرف سے حصہ لیا اور 61998 ووٹ حاصل کیے۔ اس بار بھی جیت ان کا مقدر نہ بن سکی.
یہ مسلم لیگ ن کے عروج کا دور تھا اور سابق وزیر اعظم میاں محمد نوازشریف نے بھی چیچہ وطنی کا دورہ کیا اور 25 کروڑ کے منصوبہ جات کا اعلان کیا جو کہ بعد ازاں پورے نہ ہو سکے۔
انتخابات 2018 کے لیے پی ٹی آئی امیدواران کا اعلان ہوا تو رائے مرتضی کو ملک نعمان لنگڑیال کی تنقید کا سامنا کرنا پڑا اور وہ کھل کر رائے مرتضی کی مخالفت میں سامنے آئے اور آزاد الیکشن لڑنے کا اعلان کیا.

یہ بھی پڑھیے: شخصیت، چوہدری طفیل جٹ

بعد ازاں اپنے خلاف دائر درخواست خارج ہونے پر رائے مرتضی اقبال سنبھل گئے اور سابق ایم این اے چوہدری سعید گجر کی حمایت کے بعد انکی کمپین نے زور پکڑا.
ملک نعمان لنگڑیال نے صورتحال کو بھانپتے ہوئے عمران خان کے ٹیلیفون کے بعد آزاد الیکشن لڑنے کا ارادہ ترک کر دیا اور صوبائی حلقہ پی پی 202 سے پی ٹی آئی کے ٹکٹ پر اکتفا کیا. ان کا یہ فیصلہ ان کے حق میں درست ثابت ہوا.
26 جولائی 2018 کا دن رائے مرتضی اقبال کے لیے کامیابیوں کی نوید لیے طلوع ہوا اور رائے ہاؤس کی سیاسی جنت گم گشتہ رائے مرتضی اقبال نے واپس دلا دی.
لیکن یہ سیاسی سفر رائے مرتضی اقبال کے لیے آسان نہیں ہو گا. حلقے کے لوگ رائے برادران کے سرد مہر رویے سے تنگ ہیں، دیکھنا یہ ہو گا کہ رائے مرتضی اقبال بطور ایم این اے علاقے کے مسائل حل کر پاتے ہیں یا نہیں اور ان کی سادہ دلی، اور سحر انگیز شخصیت برقرار رہے گی یا وہ بھی نوابی ہو جائیں گے.

About Farooq

Arshad Farooq has been an Urdu Columnist, feature writer and blogger for 10 years. Has has done masters in English and Journalism from Bahauddin Zakariya University Multan, Punjab, Pakistan.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے